نوشہرہ، سب انسپکٹر یار محمد کے اندھے قتل کا معمہ حل، ملزمان گرفتار

نوشہرہ پولیس نے سب انسپکٹر یار محمد کے اندھے قتل کیس کا معمہ حل کرلیا اور ملزمان کو گرفتار کرکے آلات قتل برآمد کرلیے۔

ڈی پی او نوشہرہ کا اس حوالے سے ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ دو ہفتے قبل خویشگی قبرستان سے سب انسپکٹر یار محمد کی لاش ملی تھی جسے نامعلوم ملزمان نے قتل کر دیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ سب انسپکٹر یار محمد اپر دیر کا رہنے والا اور پولیس ٹریننگ سکول سوات میں تیعنات تھا جوپولیس ایلیٹ ٹریننگ سنٹر نوشہرہ میں کورس کیلئے آیاتھا۔

ضلعی پولیس افسر کے مطابق کیس کی تفتیش کیلئے پولیس افسران پر مشتمل ٹیم تشکیل دی گئی جس نے  جدید خطوط پر  تفتیش کرتے ہوئے ملزمان تک رسائی حاصل کرلی۔

انہوں نے بتایا کہ کیس میں ملوث 7 میں سے 6 ملزمان گرفتار کر لیے گئے ہیں ابتدائی تفتیش کے دوران جنہوں نے اپنے جرم کا اعترف کرلیا ہے۔

ملزمان کی نشاندہی پر واردات میں استعمال ہونے والی موٹر کار اور اسلحہ بھی برآمد کر لیا گیا۔

ڈی پی او نے بتایا کہ ملزمان کا سب انسپکٹر یار محمد کے بتیجھےکے ساتھ مستورات کا تنازعہ تھا اور ملزمان کو شک کہ سب انسپکٹر اپنے بتیجھے کی پشت پناہی کر رہا ہے جس کے بعد ملزمان نے قریبی رشتہ دارمسماۃ(ع) کی مدد سے اُسے مردان بلایا اور  پھر مردان سے موٹر کار میں ڈال کرخویشگی قبرستان لے گئے جہاں اُسے قتل کردیا گیا۔

ضلعی پولیس افسر کے مطابق ملزمان کو عدالت سے قرار واقعی سزا دلوائی جائے گی۔

یاد رہے کہ یکم مئی کو خویشکی پایان چارسدہ روڈ پر مقتول اب انسپکٹر یار محمد کی لاش ملی تھی پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق جنہیں چھ گولیاں نزدیک سے ماری گئی تھیں جبکہ جسم پر تشدد کے نشانات بھی تھے۔

Make Money with 1xBet
Show More
Back to top button