نوشہرہ میں 9 گرلز سکولز کو تالے لگ گئے

 

سابق وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک کے آبائی ضلع نوشہرہ کےعلاقے خویشگی بالا میں متعدد گرلز پرائمری سکول کی بندش کیوجہ سے طالبات کا مستقبل خطرے میں پڑگیا ہے۔

مقامی لوگوں کے مطابق علاقے کے بیشتر سکولز محکمہ تعلیم کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے بند ہوچکے ہیں. سینکڑوں طالبات شدید دھوپ اور گرمی میں مقامی ناظم کے حجرے اور سڑکوں پر بیٹھ کر تعلیم حاصل کرنے پر مجبور ہیں.

والدین اور مقامی ناظم کے بیٹے نے سابق وزیر اعلی اور موجودہ وزیرداخلہ پرویز خٹک کو آبائی ضلع نوشہرہ میں سکولز کی بندش کا ذمہ دار ٹہرایا ہے۔ انکا کہنا ہے کہ سابقہ چیف منسٹر کے سرکاری اداروں میں مداخلت کی وجہ سے آج ہمیں یہ خمیازہ بھگتنا پڑرہا ہے۔

خویشگی بالا میں طالبات کی 9 پرائمری سکولز کی بندش پر متعلقہ سکول کی میڈیم کا کہنا ہے کہ اعلی حکام اراضی مالکان کے مطالبات تسلیم کرکے انکو چوکیدار کی نوکری دیں تاکہ محکمہ تعلیم اور اراضی مالکان کے درمیان جاری تنازعہ ختم ہوکر بچیوں کا مستقبل خراب ہونے سے بچایا جاسکے۔

مقامی لوگوں کے مطابق محکمہ تعلیم اور اراضی مالکان کے درمیان جاری کشیدگی سے طالبات کو تعلیم کے حصول میں دشواری کا سامنا ہے جوکہ محکمہ تعلیم کی جانب سے  تعلیمی ایمرجنسی کے دعووں پر سوالیہ نشان ہے۔

مقامی لوگوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ گرلز سکولز کی بندش کا نوٹس لیکر سکولز کو طالبات کے لئے جلد از کھولنے میں عملی اقدامات اٹھائے تاکہ بچیوں کا مستقبل خراب ہونے سے بچ جائے۔

Make Money with 1xBet
Show More
Back to top button