ڈینگی وائرس، بےبنیاد افواہیں پھیلانے والوں کیخلاف کارروائی کے احکامات جاری

وزیراعلی خیبرپختونخوا محمود خان نے ڈینگی وائرس کے حوالے سے بےبنیاد افواہیں پھیلانے والوں کیخلاف کارروائی کے احکامات جاری کردیے۔

صوبہ بھر میں ڈینگی بخار کی روک تھام کے حوالے سے خصوصی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ محمود خان نے ہدایت کی کہ مسئلے کے مستقل کے حل کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اینٹومالوجسٹ کی بھرتی کو یقینی بنایا جائے جبکہ تمام متعلقہ محکمے مسئلے پر قابو پانے کیلئے فعال کردار ادا کریں۔

قبل ازیں صوبہ بھر میں ڈینگی کے ادراک کے حوالے سے وزیر اعلیٰ کو تفصیلی بریفننگ دی گئی جس میں بتایا گیا کہ اب تک صوبہ بھر سے 1889 کیسز رپورٹ ہوئے جن میں سے 891 افراد میں وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے۔

بریفنگ میں کہا گیا کہ اب تک وائرس سے صوبے بھر میں کسی کی اموات واقع نہیں ہوئی، پرائیویٹ لیبارٹریز منافع کے لیے عوام میں خوف وہراس پھیلا رہی ہیں۔

وزیراعلیٰ کو بتایا گیا کہ خون میں این ایس-1 کی تصدیق ہرگز ڈینگی وائرس کی موجودگی ظاہر نہیں کرتی، مریضوں میں ڈینگی وائرس کی تشخیص کے لیے سرکاری ہسپتالوں میں خصوصی سیل قائم کئے گئے ہیں۔

اس موقع پر وزیراعلیٰ نے حکم دیا کہ ڈینگی وائرس کے حوالے سے بے بنیاد افواہیں پھیلانے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے جبکہ تمام متعلقہ محکمے مسئلے پر قابو پانے کے لیے فعال کردار ادا کریں۔

یاد رہے کہ 2 ستمبر کو قبائلی ضلع خیبر کی تحصیل باڑہ سے امسال ڈینگی کا پہلا کیس رپورٹ ہوا تھا جہاں 30 سالہ جہانزیب نامی جوان میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوئی تھی، اس کے اگلے ہی روز صوابی سے چار افراد کے متاثر ہونے کی اطلاعات موصول ہوئیں تھیں جبکہ اس وقت سینکڑوں افراد ڈینگی وائرس متاثر بتائے جاتے ہیں۔

یہ بھی یاد رہے کہ گزشتہ سال صرف خیبرپختونخوا میں ساٹھ سے زائد افراد اس مہلک بیماری کے باعث لقمہ اجل بنے تھے۔

Make Money with 1xBet
Show More
Back to top button