ڈینگی کے وار شروع، سواتی خاتون کے بعد پشاور کا نوجوان اخبار فروش جاں بحق

فیصل آباد میں 14 سالہ بچے شکار کرنے کے بعد ڈینگی وائرس نے آج خیبرپختونخوا میں پے بہ پے دوسرا وار کر لیا ہے، وائرس نے سوات میں ایک خاتون کے بعد پشاور میں ایک نوجوان اخبار فروش کی جان لے لی۔

ذرائع کے مطابق شیخ محمدی کے رہائشی نوجوان اخبارفروش طلاء محمد کو کچھ دن قبل بخار کی شکایت ہوگئی تھی جس پر وہ صوبے کے سب سے بڑے طبی مرکز لیڈی ریڈنگ ہسپتال پہنچا جہاں ابتدائی ٹیسٹ کے بعد اس میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوئی۔

بعد ازاں اسے وہاں پر داخل کرایا گیا جہاں وہ مسلسل چار دن لیڈی ریڈنگ ہسپتال پشاور میں زیر علاج رہا لیکن ڈاکٹروں کی کوششوں کے باوجود وہ جانبر نہ ہوسکا اور وہ اپنے خالق حقیقی سے جاملا۔

خیال رہے کہ آج سوات میں ڈینگی سے متاثرہ خاتون چل بسی تھیں جو خیبرپختونخوا میں امسال ڈینگی کا پہلا مہلک وار تھا۔

سیدو شریف ہسپتال کے ترجمان کے مطابق رنگ محلہ سے تعلق رکھنے والی خاتون آٹھ دنوں سے ڈینگی بخار میں مبتلا تھی جو کہ آج جاں بحق ہوگئی۔

انہوں نے بتایا کہ سوات میں ڈینگی سے سینکڑوں افراد ڈینگی کا شکار ہیں اور مینگورہ کا رنگ محلہ، ملوک آباد اور گنبد میرہ سب سے زیادہ متاثرہ علاقے ہیں۔

واضح رہے کہ طلا محمد مرحوم کا تعلق ایک غریب خاندان سے تھا جو اپنے اور اپنے بچوں کا پیٹ پالنے کیلئے روزانہ صبح سویرے  اخبارمارکیٹ پہنچ کر وہاں سے اخبارات اٹھاتا اور پھر اپنے مخصوص علاقوں میں اسے تقسیم کرتاتھا۔

مرحوم نے سوگواران میں دو بیٹے، پانچ بیٹیاں اور ایک بیوہ سوگوار چھوڑے ہیں۔

دوسری جانب طلاء محمد کی اچانک موت نے پوری اخبار فروش برادری کو غمزدہ کردیا ہے۔ اخبار فروش یونین اورعلاقہ عمائدین نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ مرحوم اپنے خاندان کا واحد کفیل تھا اور اس کی اچانک رحلت کے باعث خاندان کی کفالت کا کوئی ذریعہ نہیں بچا لہذا فوری طور پر لواحقین کے لئے مالی امداد کی منظوری دی جائے۔

انہوں نے شیخ محمدی سمیت بڈھ بیر، شیخان باڑہ، اچر کوہاٹ روڈ او  پشاور بھر میں ڈینگی کی روک تھام کے لئے بروقت اقدامات اٹھانے اور متاثرہ افراد کو بہترین طبی سہولیات کی فراہمی کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

Show More
Back to top button