پی آئی اے احتجاج: وفاقی حکومت نے بالاخر مذاکرات کا سہارا لے ہی لیا، دیر آئے درست آئے

وفاقی حکومت نے پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائن کے ملازمین کے ساتھ مذاکرات کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

جمعرات کو وزیراعظم نوازشریف کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس میں مسافروں کو سہولت فراہم کرنے کے لئے ایک سو بیس دنوں کے اندر نئی ائیر لائن بنانے کا فیصلہ کیا ہے جس کا کنٹرول حکومت کے پاس ہوگا۔ اس موقع پر کراچی میں احتجاج کے دوران ہونے والی اموات کی انکوائری کا حکم بھی دیا گیا۔

میڈٰیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیراطلاعات پرویزرشید کا کہنا تھا کہ پی آئی اے خسارے کی وجہ سے حکومت سالانہ چھ سو ارب روپے نقصان برداشت کرتی ہے۔ دوسری جانب پی آئی اے کے ہزاروں ملازمین کی تنخواہیں حکومت نے روک رکھی ہیں جبکہ بیشتر ملازمین کو اظہار وجوہ کے نوٹس بھی جاری کئے ہیں۔

خیال رہے کہ پی آئی اے ملازمین کئی دنوں سے ادارے کی نجکاری کے خلاف احتجاج جاری رکھے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے فلائٹ آپریشن بند ہے جبکہ کراچی میں احتجاج کے دوران فائرنگ سے تین اہلکاروں کی موت واقع ہوئی ہے۔

Show More
Back to top button