پاک-افغان سرحد پر فائرنگ کے خلاف دفترخارجہ کا افغانستان سے احتجاج

پاک-افغان سرحد کے قریب باڑ لگانے کے دوران فائرنگ سے فوجیوں کی شہادت پر دفترخارجہ میں افغان ناظم الامور کو طلب کر کے شدید احتجاج کیا گیا۔

دفتر خارجہ سے جاری بیان کے مطابق ‘افغان ناظم الامور کو دفترخارجہ طلب کیا گیا تھا’، جہاں پاک-افغان سرحد پر باڑ کی تکمیل میں مصروف پاکستان فوج کے جوانوں پر فائرنگ کے واقعے پر شدید احتجاج ریکارڈ کرایا گیا۔

واضح رہے کہ سرحد پر بلااشتعال فائرنگ سے 4 پاکستانی فوجی شہید اور ایک شدید زخمی ہوگیا تھا۔

دفترخارجہ کے مطابق احتجاج کے دوران واضح کیا گیا کہ افغانستان اپنی طرف سرحد سے ملحقہ علاقوں کو محفوظ بنانے کا ذمہ دار ہے جس پر کئی مرتبہ باہمی اتفاق کیا گیا تھا۔

بیان میں کہا گیا کہ پاکستان نے افغان حکومت سے ایک مرتبہ پھر سرحد کو محفوظ بنانے کے لیے ضروری اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا اور حساس علاقوں سمیت ان کے علاقوں میں دہشت گردوں کا مقابلہ کرنے کے لیے ضروری تعاون کی سطح کو برقرار رکھنے پر زور دیا۔

خیال رہے کہ پاک-افغان سرحد کے قریب دہشت گردوں کی جانب سے فائرنگ کے دو واقعات میں پاک فوج کے 4 جوان شہید اور ایک شدید زخمی ہو گیا تھا جبکہ جوابی کارروائی میں 2شدت پسند بھی مارے گئے تھے۔

واضح رہے کہ سرحد پر باڑ لگانے کے دوران افغانستان میں موجود دہشت گردوں کی جانب سے متعدد مرتبہ پاک فوج پر حملے کیے جا چکے ہیں جس کے نتیجے میں کئی جوان شہید بھی ہوچکے ہیں۔

رواں برس جولائی میں شمالی وزیرِستان میں پاک-افغان سرحد پر اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران سیکیورٹی اہلکاروں پر افغانستان کے سرحدی علاقے سے حملہ کیا گیا تھا جس کے نتیجے میں 6 جوان شہید ہوگئے تھے۔

Show More
Back to top button