قبائلی ضلع مہمند، 12 سالہ ذیشان کے قاتلوں کی عدم گرفتاری کیخلاف احتجاج

قبائلی ضلع مہمند کی تحصیل صافی میں بارہ سالہ لڑکے کے قاتلوں کی عدم گرفتاری پر اہل علاقہ نے احتجاجی مظاہرہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ ایک ماہ قبل اراضی تنازعہ پر حاجی صوبیدار اور یوسف کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا تھا جس کے نتیجے میں یوسف کا 12 سالہ بیٹا ذیشان جاں بحق جبکہ یوسف اور ان کے بھائی سمیت 3 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

بعدازاں اہل علاقہ نے ذیشان کی نعش سڑک پر رکھ کر احتجاج کیا تھا جس پرحاجی صوبیدار اور انکے 2بیٹوں کے خلاف FIR درج ہوا تاہم ملزمان تاحال گرفتار نہیں ہوئے جس کے خلاف ہر ہفتہ لوگ احتجاج کرتے ہیں۔

نمائندہ ٹی این این کے مطابق آج باوتہ بازار میں ہوئے احتجاجی مظاہرے میں لوگوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی، انہوں نے ہاتھوں میں بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر ان کے مطالبات کے حق میں نعرے درج تھے۔

مظاہرین نے پشاور باجوڑ مین شاہراہ پر دھرنا بھی دیا جو دو گھنٹوں سے زئد عرصہ تک جاری رہا۔

اس موقع پر مظاہرین نے الزام عائد کیا کہ مقامی پولیس بااثر ملزمان کی گرفتاری میں سنجیدہ نہیں، مقامی پولیس نے وزیراعلیٰ کے احکامات پر بھی عمل نہیں کیا۔

انہوں نے دھمکی دی کہ جب تک ذیشان کے بااثر قاتلوں کو گرفتار نہیں کیا جاتا مظاہروں کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔

Make Money with 1xBet
Show More
Back to top button